5

اگر آپ کی بیوی روزیہ 4کام کرتی ہے تو آپ کی وفادار نہیں

وہ کونسی باتیں ہیں حضرت علی ؓ کے ارشادات اور فرمودات کے مطابق عورت میں یہ چیزیں یہ باتیں پائی جائیں تو وہ اپنے شوہر داری نہیں کرے گی، وہ وفادار بیوی نہیں کہلائے گی۔مولائے کائنات علی المرتضی شیرخدا ؓ کے علم کو کون نہیں جانتا آپ کے عرفان کو کون نہیں جانتا آپ کے مقام اور مرتبے کی بات کی جائےتو نبی ﷺ کے فرامین کثیر احادیث طیبات آپ ؓ کے بارے میں وارد ہیں جن کو

آپﷺ نے باب العلم فرمایا ہو ان کے علم و حکمت کی روشنی میں ہم یہ گفتگوکریں گے کہ جس عورت میں یہ باتیں پائی جائیں وہ اپنے شوہر کی وفادار نہیں ہوگی۔حضرت علی ؓ کے دور خلافت کا واقعہ ہے آپ کی بارگاہ میں ایک نوجوان حاضر ہوا عرض کیا :یا امیر المؤمنین یا علی المرتضی ؓ میں ایک لڑکی کو پسند کرتا ہوں۔

میں اس سے نکاح کرنا چاہتا ہوں اس سے شادی کرنا چاہتا ہوں ،آپ کی بارگاہ میں یہ مقصد لے کر حاضر ہوا ہوں کہ آپ مجھے ارشاد فرمائیں کہ میرے لئے کونسی عورت وفادار ثابت ہوگی میں کس عورت سے نکاح کروں تو میرے ساتھ وہ وفا کرے گی ،یہ اس نواجوان نے مشورہ کیا حضرت علی المرتضیٰ ؓ سے جو علم وحکمت کا باب ہیں جو حضورﷺ کے زیر تربیت رہے ہیں ۔جن کو یہ مقام اور مرتبہ ملا ہے کہ اللہ رب العالمین بھی ان سے راضی ہے اور وہ اپنے رب سے راضی ہیں ،آج ہم بھی نکاح کرتے ہیں لیکن ہمارا طور طریقہ ہے کہ بڑوں کی پسند پر چھوڑ دیتے ہیں

اور بڑوں نے یہ تمنا ،آس اور امید رکھی ہوتی ہے کہ ہمارے بچے ہماری پسند کی شادی کریں گے۔اور ان کی یہ تمنا ہوتی ہے کہ ہمارے بچوں کی شادی امیرترین گھرانوں میں ہونی چاہئے۔رسول ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ چار باتوں کی وجہ سے عورت سے نکاح کاجاتا ہے ۔اس کی مال و دولت کی وجہ سے اس سے نکاح کیا جاتا ہے۔اس کے حسب نسب کی وجہ سے اس سے نکاح کیاجاتا ہے۔اس کے حسن و جمال اس کی خوبصورتی دیکھ کر اس سے نکاح کیاجاتا ہے ۔

اس کا دین دار ہونا دیکھ کر اس سے نکاح کیا جاتا ہے۔اور تم دیندار عورت کو ترجیح دینا اور پھر نیک صالحہ بیوی سرکاردوعالم ﷺ کے فرمان کے مفہوم کے مطابق نبی ﷺ نے ارشاد فرمایا دنیا متاع ہے اور بہترین متاع نیک صالحہ بیوی ہے فرمایا

انسان کی خوش قسمتی اسی میں ہے کہ نیک صالحہ بیوی کا ہونا۔وہ شخص وہ نوجوان حضرت علی المرتضی ؓ کی بارگاہ میں حاضر ہوا اور پوچھا حضرت علی ؓ نے نصیحت فرمایا ارشاد فرمایا سنو کونسی عورت تمہارے لئے وفادار ثابت ہوگی فرمایا عورت کی صفت ہے عورت کو عورت اس لئے کہاجاتا ہے کہ عورت کا مطلب ہوتا ہے چھپی ہوئی چیز ،عورت کا مطلب ہے چھپانا لیکن عورت اگر یہ چیز نہ کرے تو یہ تمہارے لئے وفادار ثابت نہیں ہوگی۔

چھپانے سے مراد حیا دار ہونا ،پردہ دار ہونا ہی ہے۔فرمایا جھوٹ ایک بدترین صفت ہے برا وصف ہے لیکن جھوٹی عورت اور وہ عورت جو کسی کو دھوکا دے وہ وفادار ثابت نہیں ہوگی۔قارئین غور کیجئے بیوی وہ ہو نیک صالحہ بیوی کی ایک نشانی کریم آقاﷺ نے ارشاد فرمایا ہے نیک صالحہ بیوی کی نشانی یہ ہے کہ جب شوہر اسے دیکھے تو اس سے خوش ہو جائے اسے خوشی محسوس ہو اسے فرحت محسوس ہو ۔آقاﷺ نے ارشاد فرمایا نیک صالحہ بیوی وہ ہے کہ جب شوہر اسے حکم دے تو وہ اس کی اطاعت کرے ،شوہر جب گھر سے چلا جائے

وہ اس کی عزت اور اس کے مال کی حفاظت کرے یہ نیک صالحہ بیوی کی نشانیاں ہیں۔آج ہم غور کریں ہم شادی کرتے ہیں ہمیں وہ عورت چاہئے جو بہت سارا مال لے کر آئے اور ایسا بدترین شخص اور یہ ایسی بدترین بیماری ہمارے معاشرے میں سرایت کر چکی ہے کہ جو عورت زیادہ جہیز لے کرنہیں آتی تو ہم اسے طعنے دیتے ہیں لیکن جو جہیز لے کر بھی آتی ہے تو بدترین اشخاص موجود ہیں جو فرمائشیں کرتے ہیں تو شوہر اگر پہلے سے لالچی اور ایسا کمینا شخص ہے اور اسی طرح فضول تمنا کرنے والی عورتیں بھی موجود ہیں اور انہیں نبی ﷺ کے ارشاد پر غور فرمانا چاہئے ، حضور ﷺ نے فرمایا کہ نیک صالحہ اور کثرت سے بچے جننے والی عورت کو ترجیح دو۔ شکریہ

Source: Country92

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں